• A
  • A
  • A
آدھار معاملہ : سپریم کورٹ میں سماعت جاری

سینئر ایڈوکیٹ کپل سبل کا کہنا ہے اگر آپ کے پاس اپنی شناخت کا کوئی بھی ثبوت موجود نہیں ہے تو آپ سرے سے آدھار ہی حاصل نہیں کرسکتے

علامتی تصویر


آدھار کارڈ معاملہ پر سپریم کورٹ میں سماعت جاری ہے۔ آج کی سماعت میں جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ نے احساس ظاہر کیا کہ اگر کسی شہری کے پاس اپنی شناخت کا ایک بھی ثبوت موجود نہیں ہے تو یہ حکومت کے لیے اس شہری کو ایک شناخت فراہم کرنے کی شروعات ہوسکتی ہے۔


معزز جج نے مزید کہا کہ حکومت اس غلط فہمی میں مبتلا ہوسکتی ہے کہ ہر بھارتی کے بعد کوئی نہ کوئی شناختی ثبوت موجود ہوگا جبکہ سماج کا ایک بڑا طبقہ ایسا ہے جس کے افراد کے پاس کوئی ثبوت موجود نہیں ہے۔ ان میں مسلسل نقل مکانی کرنے والے مزدوروں کی زیادہ تعداد ہے جن کے پاس سرے سے کوئی شناختی ثبوت موجود نہیں ہوتا۔ اگر یہ بات حقیقت پر مبنی ہے تو یہ حکومت کے لیے ایک شروعات ہوسکتی ہے جس کے تحت وہ شناخت سے محروم شہریوں کو ایک شناختی ثبوت فراہم کرے۔

بتادیں کہ آدھار کارڈ کے معاملے کی سپریم کورٹ کی ایک پانچ رکنی بینچ پر سماعت ہورہی ہے۔ چیف جسٹس، جسٹس دیپک مشرا اس بینچ کی صدارت کررہے ہیں جبکہ پانچ ججوں میں جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ بھی شامل ہیں۔

جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ نے مزید کہا کہ آدھار ایسے شہریوں/افراد کو ایک شناخت فراہم کرسکتا ہے جن کے پاس تاحال کوئی شناخت موجود نہیں ہے۔

اس کے جواب میں سینئر وکیل کپل سپل نے کہا کہ اگر کسی کے پاس کوئی شناختی ثبوت موجود نہیں ہے تو وہ سرے سے آدھار کارڈ حاصل ہی نہیں کرسکتا۔ ہمیں اس پر مزید وضاحت کے ساتھ بات کرنی ہوگی۔ آدھار ایکٹ کا مقصد یہ نہیں ہے کہ وہ کسی شہری/فرد کو ایک شناخت فراہم کرے۔ یہ ایکٹ ایک ایسے میکانزم سے متعلق ہے جو شہریوں کی موجودہ شناخت کی توثیق یا تصدیق کرتا ہے۔ اس کے بعد بھی شناخت کی تصدیق یا توثیق کو بائیومیٹرک سے جوڑنے کی کیا ضرورت ہے؟

ایک موقع پر جسٹس اے کے سکری نے بائیومیٹرک کو یہ کہہ کر حق بجانب قرار دینے کی کوشش کی کہ حکومت اسے جعلی شناختوں کے مسئلہ کا حل سمجھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں کے کئی شناختی ثبوت ہیں جن کی آسانی کے ساتھ نقل کی جاسکتی ہے۔ کم از کم ایک شناخت بائیومیٹرک کے ساتھ ہونی چاہئے۔

بحث کل (15فروری کو) بھی جاری رہے گی۔

CLOSE COMMENT

ADD COMMENT

To read stories offline: Download Eenaduindia app.

SECTIONS:

  होम

  राज्य

  देश

  दुनिया

  कारोबार

  क्राइम

  खेल

  मनोरंजन

  इंद्रधनुष

  सहेली

  गैलरी

  टूरिज़्म

  MAJOR CITIES